Skip to main content

Posts

Showing posts from October, 2016

کچھ رد عمل

ترکهان دکان بند کر کے گهر گیا تو کہیں سے گهومتا پهرتا ایک سیاہ کوبرا ناگ اس کی ورکشاپ میں گهس آیا. یہاں بظاہر تو ناگ کی دلچسپی کی کوئی چیز نہیں تهی پهر بهی ادهر سے ادهر اور اوپر سے نیچے جائزہ لیتا پهر رہا تها کہ اس کا دهڑ وہاں پڑی ایک آری سے ٹکرا کر بہت معمولی سا زخمی ہو گیا.
گهبراہٹ میں ناگ نے پلٹ کر آری پر پوری قوت سے ڈنگ مارا. فولادی آری پر زور سے لگے ڈنگ نے آری کا کیا بگاڑنا تها الٹا ناگ کے منہ سے خون بہنا شروع ہو گیا. اس بار خشونت اور تکبر میں ناگ نے اپنی سوچ کے مطابق آری کے گرد لپٹ کر، اسے جکڑ کر اور دم گهونٹ کر مارنے کی پوری کوشش کر ڈالی.
دوسرے دن جب ترکهان نے ورکشاپ کهولی تو ایک ناگ کو آری کے گرد لپٹے مردہ پایا جو کسی اور وجہ سے نہیں محض اپنی طیش اور غصے کی بهینٹ چڑھ گیا تها.
بعض اوقات غصے میں ہم دوسروں کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرتے ہیں، مگر وقت گزرنے کے بعد ہمیں پتہ چلتا ہے کہ ہم نے اپنے آپ کا زیادہ نقصان کیا ہے.
اچهی زندگی کیلئے بعض اوقات ہمیں
کچھ چیزوں کو
کچھ لوگوں کو
کچھ حوادث کو
کچھ کاموں کو
کچھ باتوں کو
نظر انداز کرنا چاہیئے.
اپنے آپ کو ذہانت کے ساتھ نظر انداز کرنے کا عا…

کتے اور بھوربن

سیٹھ ''بھولا بھالا'' کی انکم ٹیکس ریٹرن پڑھتے ہوئے اچانک میں چونک گیا، جس پر لکھا تھا'' کتوں کا کھانا 75000 روپے''۔ تین دن کی مغز ماری کے بعد یہ پہلا نکتہ تھا جس پر میں نے سیٹھ جی کی ٹیکس چوری پکڑ ہی لی، نہ جانے لوگ ٹیکس بچانے کے لیئے کیسے کیسے ہتھکنڈے استعمال کرتے ہیں؟ اللہ معاف فرمائے۔  اب میں دیکھتا ہوں کہ یہ ٹیکس چور مجھ سے کیسے بچ پاتا ہے؟  چنانچہ اگلے ہی دن میں نے انہیں اپنے دفتر میں طلب کرلیا، سیٹھ صاحب تشریف لائے تو میں نے انہیں ٹیکس کی اہمیت، ملک و قوم کے لیئے اسکی ضرورت اور ایمانداری کے موضوع پر ایک سیر حاصل لیکچر پلا دیا، وہ خاموشی سے سنتا رہا، نہ ہوں نہ ہاں، مجھے اسکا رویہ دیکھ کر مزید غصہ آگیا اور اسے کتوں کے کھانے کے بارے میں بتا کر مزید شرمندہ کرنے کی کوشش کی اور ناکام رہا،آخر کار میں خاموش ہوکر سیٹھ بھولا بھالا کی طرف دیکھنے لگا، وہ مسکرایا اور کہنے لگا،، صاحب،، آپ افسر ہو حکم کرو ہم کیا کر سکتے ہیں آپکے لیئے؟،،،میں زیر لب مسکرایا کہ اب اونٹ پہاڑ کے نیچے آگیا ہے، چنانچہ میں نے نہائت عیاری کے ساتھ مسکراتے ہوئے کہا،،،، سیٹھ جی،، کیا آپ ای…

Time Zone

New York is 3 hrs ahead of California but it does not mean that California is slow, or that New York is fast. Both are  working based on their own "Time Zone."
Some one is still single. Someone got married and 'waited' 10 yrs before having a child, there is another who had a baby within a year of marriage.Someone graduated at the age of 22, yet waited 5 years before securing a good job; and there is another who graduated at 27 and secured employment immediately !Someone became CEO at 25 and died at 50 while another became a CEO at 50 and lived to 90 years. Everyone works based on their 'Time Zone',People can have things worked out only according to their pace.
Work in your “time zone”.Your Colleagues, friends, younger ones might "seem" to go ahead of you.
May be some might "seem" behind you.Don't envy them or mock them, it's their 'Time Zone.'
You are in yours!Hold on, be strong, and stay true to yourself. All things shall…

Confidence vs Fear

When confidence is high, then fear goes to low 


Source:  https://goo.gl/images/g8upDV

Samoosa Vala

In Delhi, there was a Samosa vendor. His shop was in front of a Big company. His Samosa was so tasty.! Most of the employees use to eat that samosa at lunch time.
One day, a Manager came to that samosa wala. while he was eating samosa he comes in the fun mood.
he asks a question – Yaar you have maintained your shop so nicely.
you have good management skills. don’t you think that you are wasting your talent and time by selling just Samosas?
Think, if you were working like me in any big company. you would have been a manager like me isn’t ?
Poor samosa wala… he smiled at the manager and said awesome lines.
Sir, I thought my work is better than your work. do u know why?
10 years back I used to sell samosa in tokari (Leaf basket). At same time you got this job. That time I was earning Rs. 1,000 in a month and your salary was 10K.
In this 10 years of journey, we did progress a lot.
I owned a shop and became famous samosa-wala in this area and you became a manager.
Now you are earning Rs. 1…

جہاں تک کام چلتا ہو غذا سے

یہ نظم آج سے پچاس سال قبل راندھیر (بھارت) کے ایک حکیم صاحب نے کہی تھی ، جو شاعر بھی تھے...جہاں تک کام چلتا ہو غذا سے
وہاں تک چاہیے بچنا دوا سےاگر خوں کم بنے، بلغم زیادہ
تو کھا گاجر، چنے ، شلغم زیادہجگر کے بل پہ ہے انسان جیتا
اگر ضعف جگر ہے کھا پپیتاجگر میں ہو اگر گرمی کا احساس
مربّہ آملہ کھا یا انناساگر ہوتی ہے معدہ میں گرانی
تو پی لی سونف یا ادرک کا پانیتھکن سے ہوں اگر عضلات ڈھیلے
تو فوراََ دودھ گرما گرم پی لےجو دکھتا ہو گلا نزلے کے مارے
تو کر نمکین پانی کے غرارےاگر ہو درد سے دانتوں کے بے کل
تو انگلی سے مسوڑوں پر نمک مَلجو طاقت میں کمی ہوتی ہو محسوس
تو مصری کی ڈلی ملتان کی چوسشفا چاہیے اگر کھانسی سے جلدی
تو پی لے دودھ میں تھوڑی سی ہلدیاگر کانوں میں تکلیف ہووے
تو سرسوں کا تیل پھائے سے نچوڑےاگر آنکھوں میں پڑ جاتے ہوں جالے
تو دکھنی مرچ گھی کے ساتھ کھا لےتپ دق سے اگر چاہیے رہائی
بدل پانی کے گّنا چوس بھائیدمہ میں یہ غذا بے شک ہے اچھی
کھٹائی چھوڑ کھا دریا کی مچھلیاگر تجھ کو لگے جاڑے میں سردی
تو استعمال کر انڈے کی زردیجو بد ہضمی میں تو چاہے افاقہ
تو دو اِک وقت کا کر لے تو فاقہ

What is Audit?

Once upon a time there was a shepherd looking after his sheep on the side of a deserted road. Suddenly a brand new Porsche screeches to a halt. The driver, a man dressed in an Armani suit,
Cerutti shoes, Ray-Ban sunglasses, TAG-Heuer wrist watch, and a Pierre Cardin tie gets out and asks the shepherd, 'If I can tell you how many sheep you have, will you give me one of them?'The shepherd looks at
the young man, then looks at the large flock of grazing sheep and replies, 'Okay.'The young man parks the car, connects his laptop to the mobile-fax, enters a NASA Website, scans the ground using his GPS, opens a database and 60 Excel tables filled with algorithms and pivot tables. He then prints out a 150-page report on his high-tech
mini-printer, turns to the shepherd and says, ‘'You have exactly 1,586 sheep.'.            The shepherd cheers, 'That's correct, you can have your sheep. 'The young man takes one of the animals from the flock and puts it in the…

Tips by Warren Buffet

Internal vs External Motivation

Live Your Life Before Life Becomes Lifeless

A boat is docked in a tiny Mexican fishing village. A tourist complimented the  local fishermen on the quality of their fish and asked how long it took to catch them.  "Not very long." they answered in unison. "Why didn't you stay out longer and catch more?" The fishermen explained that their small catches were sufficient to meet their needs and those of their families.  "But what do you do with the rest of your time?" "We sleep late, fish a little, play with our children, and take siestas with our wives.  In the evenings, we go into the village to see our friends, have a few drinks, play the guitar, and sing a few songs.   We have a full life."
The tourist interrupted,  "I have an MBA from Harvard and I can help you!
You should start by fishing longer every day.
You can then sell the extra fish you catch.
With the extra revenue, you can buy a bigger boat." "And after that?" "With the extra money the larger boat …

Keep smiling

An Old man has 8 hair on his head. He went to the Barber shop.

Barber in anger asked: shall i cut or count? Old man smiled and said: "Colour it!" LIFE is to enjoy with whatever you have with you, keep smiling.

گوگل کے چیف ایکزیکٹیو "سندرراجن پچائی" ہیں

As received:اس وقت گوگل کے چیف ایکزیکٹیو "سندرراجن پچائی" ہیں ۔ جن کا تعلق بھارت سے ہے۔ ان کی سالانہ تنخواہ پاکستانی روپے میں 2 ارب روپے سے زائد بنتی ہے۔ جو کہ اس وقت دنیا میں سب سے زیادہ تنخواہ لینے والے ملازم بھی ہیں ۔ آئیے ان کے بارے میں دوستوں کو کچھ معلومات فراہم کرتے ہیں۔کہ ایک دو کمروں کے گھر میں چٹائی پر بیٹھ کر پڑھنے والا شخص کس طرح گوگل کا سی ای او بنا ۔سندر پچائی تامل ناڈو کے شہر مدورائی کا رہنے والا تھا جو کہ 12 جولائی 1972 کا پیدا ہوا۔اس نے غربت میں آنکھ کھولی‘ والد رگوناتھ پچائی الیکٹریکل انجینئر تھا لیکن خاندان کی آمدنی بہت محدود تھی‘ گھر دو کمروں کا فلیٹ تھا‘ اس فلیٹ میں اس کا ٹھکانہ ڈرائنگ روم کا فرش تھا‘ وہ فرش پر چٹائی بچھا کر بیٹھ جاتا تھا‘ وہ پڑھتے پڑھتے تھک جاتا تھا تو وہ سرہانے سے ٹیک لگا کر فرش پر ہی سو جاتا تھا‘ ماں کے ساتھ مارکیٹ سے سودا لانا‘ گلی کے نلکے سے پانی بھرنا‘ تار سے سوکھے کپڑے اتارنا اور گلی میں کرکٹ کھیلنے والے بچوں کو بھگانا بھی اس کی ذمہ داری تھی‘ گھر کی مرغیوں اور ان کے انڈوں کو دشمن کی نظروں سے بچانا بھی اس کی ڈیوٹی تھی اور شہر بھر م…

معلم جلدی بوڑھے نہیں ھوتے

ایک صاحب کی شادی کی عمر نکل گئ آخر ایک لڑکی پسند آ گئ تو رشتہ پرپوز کیا لڑکی نے دو شرطیں رکھیں اور شادی پر تیار ھو گئ ایک یہ کہ ھمیشہ جوانوں میں بیٹھو گے دوسرا دیوار پھلانگ کے گھر آیا کرو گے ! شادی ھو گئ بابا جی جوانوں میں ھی بیٹھتے اور گپیں لگاتے،جوان ظاھر ھے لڑکیوں کی اور پیار محبت کی ھی باتیں کرتے ھیں،منڈیوں کے بھاؤ سے انہیں دلچسپی نہیں اور نہ موضوعات شریف سے کچھ لینا دینا،، بابا کا موڈ ھر وقت رومینٹک رھتا اور جاتے اور ایک جھٹکے سے دیوار پھلانگ کر گھر میں دھم سے کود جاتے !
آخر ایک دن بابا جی کے پرانے جاننے والے مل گئے ، وہ انہیں گلے شکوے کر کے اور گھیر گھار کے اپنی پنڈال چوکڑی میں لے گئے،، اب وھاں کیا باتیں ھونی تھیں ؟ یار گھٹنوں کے درد سے مر گیا ھوں بیٹھ کر نماز پڑھتا ھوں،، میری تو بھائی جان ریڑھ کی ھڈی کا مہرہ کھل گیا ھے،ڈاکٹر کہتا ھے جھٹکا نہ لگے،، یار مجھے تو نظر ھی کچھ نہیں آتا کل پانی کے بجائے مٹی کا تیل پی گیا تھا، ڈرپ لگی ھے تو جان بچی ھے،، بابا جوں جوں ان کی باتیں سنتا گیا توں توں اس کا مورال زمین پر لگتا گیا،، جب ٹھیک پاتال میں پہنچا تو مجلس برخواست ھو گئ اور بابا گھسٹتے …